وزن گھٹانے کی خواہش مند خواتین کے لیے کیلا بہترین غذا

صحت و غذائیت

حمنہ گل۔ فیصل آباد

وٹامن، پروٹین اور معدنی اجزا سے بھرپور کیلا… اعصابی غذا ہے
وزن گھٹانے میں  معاون اور سگریٹ نوشی چھوڑنے والوں کے لیے مددگار
مخصوص توانائی میں  اضافے کا بہترین ذریعہ اور انسان کوخوش باش رکھنے میں  معاون ثابت ہوتا ہے
روزانہ 2کیلے کھانے سے جسم مےں پوٹاشیم کی کمی پوری ہوتی ہے ماہرین
کیلا جو بلڈ پریشر کو اپنے لیول میں رکھنے پر مددگار ہے

کیلا بہت لذیذ پھل ہے۔ اس کا شمار ان پھلوں مےں ہوتا ہے جن کا ذکر قرآن پاک میں  آیا ہے،اﷲ تعالیٰ کا ارشاد ہے” جنت کے باغوں مےں کیلے تہ بہ تہ ہونگے“ غذائی اعتبار سے کیلا سب سے زیادہ اہمیت کا حامل ہے۔ کیلا صحت خصوصاً خواتین کے مخصوص ایام کے دوران ایک بھرپور غذا ہے۔ کیلا ایسی اعصابی غذا ہے جو پورے بدن کے نروس سسٹم (اعصاب) کو متحرک رکھتی ہے جس سے جسم میں  رطوبت کی کمی نہیں ہوتی اور انسانی جسم کثیر بیماریوں سے محفوظ رہتا ہے کیونکہ کیلا قوت مدافعت پیدا کرنے کا قدرتی ذریعہ ہے۔ جس انسان کے اعصاب یعنی نروس کمزور ہوں وہ جسم کی اندرونی تبدیلیوں کو فوری محسوس نہیں کرتے جس سے بیماری اپنا وقت پورا کرکے شدید تکلیف دہ شکل اختیار کرلیتی ہے۔
ایک نئی تحقیق کے مطابق کیلا سگریٹ نوشی سے چھٹکارا پانے میں بھی مدد گار ثابت ہوتا ہے۔کیلے پر کی جانے والی تحقیق کے مطابق تر گرم مزاج کا حامل یہ پھل مخصوص توانائی میں اضافے کا بہترین ذریعہ تو ہے ہی لیکن اس مےں ایک خاص پروٹین trytophanہوتا ہے جو انسانی جسم میں جاکرserotonin میں تبدیل ہوجاتا ہے۔ serotonin ایک ہارمون ہے جو انسان کوخوش باش رکھنے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ کیلے میں آئرن، پوٹاشیم اور میگ نیشیم بھی ہوتا ہے جو سگریٹ نوشی کرنے والے افراد میں نکوٹین کے مضر اثرات کوکم کرتا کیلا بے حد غذائیت سے بھرپور ہوتا ہے، اس میں موجود مٹھاس بہت ہی جلد بدن کا حصہ بن کر توانائی فراہم کرتی ہے۔ پکا ہوا کیلا شہد کے ساتھ کھانے سے ہضم کے نظام میں بھی بہت تیزی آتی ہے۔ ہاضمے کی خرابی کے باعث بچوں کی نشوونما رک جاتی ہے۔
ایک درمیانے کیلا میں105کیلوریزاور3گرام فائبرموجودہوتاہے۔اس کے علاوہ یہ وٹامن بی6پوٹاشیم اور فولیٹ کا بھی اہم ذریعہ ہے۔442ملی گرام کے ساتھ کیلے سب سے زیادہ پوٹاشیم رکھنے والا پھل ہے جو بلڈ پریشر کو اپنے لیول میں رکھنے پر مددگار ہے۔
خواتین کے مخصوص ایام کی غذا
مخصوص ایام خواتین کی صحت علاوہ ان کے مزاج پر اثرانداز ہوتے ہیں۔ خواتین کو صحت کے مسائل درپیش آتے ہیں اور مزاج میں بھی اکثر تیزی آجاتی ہے۔ اعصابی کشیدگی بڑھ جاتی ہے، چڑچڑاہٹ بھی پیدا ہوجاتی ہے۔ مخصوص ایام کے دوران میں خواتین کو لازمی طور پر تیز مسالحوں اور زیادہ نمک مرچ سے پرہیز کرنا چاہیے۔ ان کے لیے ایسی حالت میں کیلا ایک مفید غذا ہے۔ اگر روز کیلے کھانے کے علاوہ کیلوں کا شیک بنا کر اور اس میں شہد ڈال کر کھائیں تو اس سے خواتین کی نہ صرف صحت بہتر رہتی ہے، اعصابی دباﺅ اور مزاج کی گرمی بھی کم ہوتی ہے
بوڑھوں کی غذا
کیلابوڑھے مردوں اور خواتین کی بھی اچھی غذا ہے۔اگر اس کو دودھ کے ساتھ ملا کر کھایا جائے تو غذائیت کی مقدر اور بھی بڑھ جاتی ہے۔کیلے کھیر اور فیرنی میں بھی ملائے جا سکتے ہیں۔
طبی خواص
طب اسلامی، طب قدیم کے مطابق کیلا قبض کشا ہے، گردوں کو طاقت بخشتا ہے،گلے کی خراش کو دور کرتا ہے، کھانسی کو آرام دیتا ہے، مروڑ، پیچیش اور بچوں کے اسہال میں  اس کا استعمال بہت فائدہ مند ہے۔ دوسرے لفظوں میں  یہ آنتوں کی شکایات میں  مفید ہے، تیزابیت کو دورکرتا ہے اس لئے معدے کے السر والے افراد اس کو استعمال کر سکتے ہیں۔کسی حد تک یرقان کو بھی فائدہ کرتا ہے۔
پرہیز
زیابیطس کے مریض کیلا استعمال نہ کریں،اس کو خالی پیٹ بھی نہیں کھانا چاہیے کیونکہ اس طرح پیٹ میں گیس پیدا ہوتی ہے۔کیلے کے بعد سبز الائچی کھانے سے اس کی اصلاح ہوجاتی ہے۔ جن افراد کو بلغم کا عارضہ ہو

Facebook Comments