افغانستان اسپیشل فورسز کے اڈے پر طالبان کا حملہ-126ہلاک

افغانستان کے صوبہ میدان وردک کے دارالحکومت میدان شہر میں طالبان نے افغان اسپیشل فورسز کے اڈے پر حملہ،اڈے کی عمارت جزوی طورپرتباہ

حملہ پیر کی صبح 7 بجے کیا گیا،طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا حملے میں 190 افغان اہلکار ہلاک وزخمی کرنے کا دعویٰ،ہلاکتوں میں مزید اضافے کا خدشہ

افغانستان کے صوبہ میدان وردک کے دارالحکومت میدان شہر میں طالبان نے افغان اسپیشل فورسز کے اڈے پر حملہ کیاہے۔ جس میں کے نتیجے میں 126 اہلکار ہلاک ہوگئے۔ان ہلاکتوں کا اعتراف ایک سرکاری عہدیدار نے برطانوی خبرایجنسی سے گفتگو میں کیا۔حملے کے بعد دھویں کے بادل دور دورتک دیکھے گئے۔ جبکہ اڈے کی عمارت جزوی طور پرتباہ ہوگئی۔ بیرونی دیواریں مکمل طور پرختم ہوگئیں۔طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ پیرکی صبح 7 بجے طالبان نے پہلے اڈے پر خودکش کار بم حملہ کیا جس کے بعد بمبار کے دوساتھیوں نے اندر گھس پر فائرنگ کردی ترجمان کا کہنا تھا کہ خودکش دھماکے سے اڈے کی دیواریں تباہ ہوگئیں۔طالبان ترجمان نے حملے میں 190 افغان اہلکار ہلاک و زخمی ہونے کا دعویٰ کیا تاہم مرنے والوں اور زخمیوں کی الگ الگ تعداد نہیں بتائی۔برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان کے ایک سینئر سیکورٹی عہدیدارنے بتایا ہے کہ حملے میں 126 اہلکار مارے گئے ہیں جب کہ ایک اور ذریعے کا بھی کہنا ہے کہ 100 سے زائد ہلاک ہوئے ہیں۔ صوبائی کونسل کے رکن شریف ہوتک نے خبر ایجنسی کو بتایا کہ انہوں نے اسپتال میں کم ازکم 35 اہلکاروں کی لاشیں دیکھی ہیں، مزید لاشوں اور زخمیوں کو کابل منتقل کیا گیا ہے۔ایرانی خبر ایجنسی تسنیم نے بھی اپنی رپورٹ میں 100 سے زائد اہلکار مارے جانے کا ذکر کیا۔اس سے پہلے کابل سے ذرائع نے بتایا تھا کہ حملے میں 90 افغان اہلکار مارے گئے ہیں۔حملے کے بعد اڈے کو افغان سیکورٹی فورسز نے گھیرے میں لے لیا تاہم دھویں کے بادل دور دور تک دکھائی دیتے رہے۔افغان اسپیشل فورسز امریکہ کی تربیت یافتہ ہیں اور انہیں افغان نیشنل آرمی کی نسبت بہتر تربیت یافتہ سمجھا جاتا ہے۔

Facebook Comments