امن و استحکام کے ثمرات عوام تک پہنچنے چاہئیں،آرمی چف

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ اپنی سرحدوں کے تحفظ سمیت مربوط قومی ردعمل پر بھرپور توجہ ہے، ملک دشمن عناصر کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے کوشاں ہیں،امن و استحکام کیلئے حاصل کردہ کامیابیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے

داخلی سکیورٹی کے ثمرات سماجی و اقتصادی ترقی کی شکل میں سامنے آنے چاہئیں: کور کمانڈرز کانفرنس سے خطاب، افغان سفیر کی ملاقات

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ اپنی سرحدوں کے تحفظ سمیت مربوط قومی ردعمل پر بھرپور توجہ ہے، ملک دشمن عناصر کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے کوشاں ہیں،امن و استحکام کیلئے حاصل کردہ کامیابیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے، اب ضرورت اس بات کی ہے کہ امن کی بہتر صورتحال کے ثمرات لوگوں تک پہنچیں۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت جی ایچ کیو میں کور کمانڈرز کانفرنس ہوئی جس میں داخلی سکیورٹی اور علاقائی امن سمیت اہم معاملات زیر غور آئے۔ کانفرنس میں جیو سٹریٹیجک صورتحال اور داخلی سکیورٹی کے معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق اجلاس میں علاقائی امن باالخصوص افغانستان میں مفاہمتی عمل میں پیشرفت پر اظہار اطمینان کیا گیا۔اجلاس میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بھارت کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزیوں پر غور کیا گیا جبکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے معصوم کشمیریوں پر مظالم بھی زیر بحث آئے۔آئی ایس پی آر کے مطابق کور کمانڈرز کانفرنس میں سرحد پار سے کسی بھی مہم جوئی کی صورت میں ورکنگ باؤنڈری اور مشرقی سرحدوں پر پاک فوج کی جوابی تیاریوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں مقبوضہ کشمیر میں آزادی کیلئے برسر پیکار کشمیری بھائیوں سے یکجہتی کا اظہار بھی کیا گیا۔اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ اپنی سرحدوں کے تحفظ سمیت مربوط قومی ردعمل پر بھرپور توجہ ہے، ملک دشمن عناصر کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔انہوں نے کہا امن و استحکام کیلئے حاصل کردہ کامیابیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے، اب ضرورت اس بات کی ہے کہ امن کی بہتر صورتحال کے ثمرات لوگوں تک پہنچیں۔آرمی چیف نے مزید کہا داخلی سکیورٹی کے ثمرات عوام کی سماجی و اقتصادی ترقی کی شکل میں آنے چاہئیں۔علاوہ ازیں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے افغانستان کے سفیر شکراللہ عاطف مشال نے ملاقات کی۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور اور علاقائی سلامتی کے معاملات باالخصوص افغان امن عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔افغان سفیر نے افغانستان میں امن کے عمل کے حوالے سے پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔

Facebook Comments