بھارتی فوج کی دہشتگردی ، مزید 8 کشمیری شہید،درجنوں زخمی، حریت قیادت آج ہڑتال کرے گی

بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی جاری، مزید 8 کشمیری شہید،درجنوں زخمی، حریت قیادت نے آج ہڑتال کی اپیل کردی 
بھارتی فوج کی پلوامہ میں تلاشی اور محاصرے کے دوران نصیر پنڈت ، عمر میر ، خالد احمد ، رئیس ڈار کو شہید ، ایک مکان تباہ کر دیا،مظاہرین اور قابض فوج میں شدید جھڑپیں، کرفیو نافذ ،انٹرنیٹ سروسز معطل
شوپیان میں 3، ڈوڈہ میں ایک شہید، بارہمولہ میں تشدد کانشانہ بننے والا ارشد ڈار چل بسا، سمبل میں بچی کی بےحرمتی کےخلاف دھرنا دینے والے طلبہ پرپولیس ٹوٹ پڑی،طاقت کا وحشیانہ استعمال

شخصیات ویب رپورٹ
بھارتی فوج کی مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشتگردی کاسلسلہ جاری ہے۔کشمیر میڈیاسروس کے مطابق ایک ہی دن میں بھارتی فوج کے ہاتھوں معصوم کشمیریوں کی شہادتوں کی تعداد8ہوگئی جبکہ درجنوں زخمی ہیں۔ بھارتی فوجیوں نے جمعرات کی صبح ضلع پلوامہ کے علاقے ڈالی پورہ میں تلاشی اور محاصرے کی ایک کارروائی کے دوران تین نوجوانوں نصیر پنڈت ، عمر میر اور خالد احمد کو شہید اور ایک مکان کو تباہ کر دیا۔

بھارتی فوج کی مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی جاری ہے آج مزید 8 کشمیری شہید کردیے، پلوامہ میں تلاشی اور محاصرہ ایک مکان تباہ کر دیا انٹرنیٹ سروسز معطل

بھارتی فوج کی مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی جاری ہے آج مزید 8 کشمیری شہید کردیے، پلوامہ میں تلاشی اور محاصرہ ایک مکان تباہ کر دیا انٹرنیٹ سروسز معطل

بھارتی فوجیوں کی فائرنگ سے ایک اور نوجوان رئیس ڈار شہید اوراس کا بھائی یونس ڈار زخمی ہو گیا۔ رئیس اور یونس کے بارے میں بتایا جارہا ہے کہ وہ تباہ ہونے والے مکان کے مالک کے بیٹے تھے۔ قبل ازیں اسی علاقے میں ایک بھارتی فوجی ہلاک اور دوشدید زخمی ہوگئے تھے۔نوجوانوں کی شہادت کے بعد مظاہرین اور بھارتی فورسز کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں۔ بھارتی پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس سمیت طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا۔ قابض انتظامیہ نے جھڑپوں کے بعد ضلع پلوامہ میں کرفیو نافذ اور انٹرنیٹ سروس معطل کر دی۔ شوپیان کے علاقے ہاندیو میں بھارتی فوج کی طرف سے محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران تین مزید کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا گیا۔ضلع ڈوڈہ میں بیروہ کے علاقے میں نوجوان نعیم شاہ کو فائرنگ کرکے شہید کردیا گیا، جس کے بعد علاقے میں بھارتی فورسزنے کرفیو نافذ کردیا۔ ضلع بارہمولہ میں پٹن کے علاقے چھنہ بل میں13مئی کو بھارتی فورسز کی پر تشدد کارروائی میں زخمی ہونیوالا 23سالہ کشمیری نوجوان ارشد ڈار صورہ ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔ ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر فاروق جان کے مطابق ارشد کے جسم پر گولیوں اور پیلٹ گن سمیت مختلف قسم کے زخم موجود تھے اور اس کی دونوں آنکھیں بھی زخمی تھیں۔ ضلع شوپیان کے علاقے زینہ پورہ میں بھارت نواز پی ڈی پی کاایک کارکن عرفان لون جو گزشتہ ہفتے نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ میں زخمی ہو گیا تھا سرینگر کے ایک ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔دریں اثنا سرینگر کے مختلف تعلیمی اداروں کے طلبا نے باندی پورہ کے علاقے سمبل میں ایک تین سالہ بچی کی بے حرمتی کیخلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کیےاوردھرنا بھی دیا۔بھارتی فورسز نے احتجاجی طلبا کو منتشر کرنے کیلئے طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا جس کے بعد طلبا اور فورسز اہلکاروں کے درمیان سخت جھڑپیں ہوئیں۔حریت قیادت نے سرینگر سے جاری بیان میں بھارتی فورسز کی طرف سے بے گناہ کشمیری نوجوانوں کی تازہ لہر کیخلاف آج مقبوضہ وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دی ہے۔حریت قیادت نے افسوس ظاہر کیا کہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے کے

باوجود قتل عام کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔

 بارہمولہ میں تشدد کانشانہ بننے والا ارشد ڈار شہید ہوگیا

بارہمولہ میں تشدد کانشانہ بننے والا ارشد ڈار شہید ہوگیا

Facebook Comments