خوشہ شاعری

صدف اقبال تم کون ہو اور کہاں سے آئی ہو ؟نظم

تعارف : صدف اقبال! بھارت کے صوبے بہار کے شہر ”گیا “ کے نزدیک ایک چھوٹے سے گاﺅں بھدیہ میں رہتی  ہیں۔ انہوں نے گیا کالج سے تعلیم حاصل کی ہے، اپنے علاقے کی بہتری اور لوگوں کی فلاح کے لیے وہ اپنی ایک این جی او کے ذریعے سماجی کاموں میں سرگرمی سے حصہ لیتی

Read More

حسن کی فتنہ گری افسون،پارینہ ہوئی عاشقی کے ولولے بھی طاقِ نسیاں ہو گئ

معروف شاعرہ انجم عثمان نے دعویٰ کردیا کہ حسن کی فتنہ گری افسون،پارینہ ہوئی۔۔۔عاشقی کے ولولے بھی طاقِ نسیاں ہو گئے کیا واقعی؟؟؟؟ پڑھیے اور داد دیجیے کہ کس ہنر سے معروف شاعرہ انجم عثمان نے اپنی بات ثابت کردی خوشہ شاعری انجم عثمان   معروف شاعرہ کی اثر انگیز غزل میں تو سمجھی تھی

Read More

عائشہ بیگ عاشی کے یومِ پیدائش 13ستمبر پر ان کے کلام کی اشاعت کا تحفہ خاص

خوشہ شاعری   عائشہ بیگ عاشی  مثلِ دریا یہ جو چڑھتا ہے اُتر جاتا ہے وقت اچھا ہو بُرا ہو یہ گزر جاتا ہے آنکھ سے اشک بلا وجہ نہیں بہتے ہیں حد گزر جانے سے برتن بھی تو بھر جاتا ہے ۔۔۔۔۔ خمارِ عشق رکوع و سجود میں موجود سبھی حدود سے باہر حدود

Read More

’’غم یا خوشی کا ترجماں تو بھی نہیں میں بھی نہیں‘‘ غزل: ڈاکٹر حنا امبرین طارق

خوشہ شاعری غم یا خوشی کا ترجماں تو بھی نہیں میں بھی نہیں اک دوجے پر ہرگز عیاں تو بھی نہیں میں بھی نہیں بدلا کہیں کچھ بھی نہیں دنیا میں سب کچھ ہے وہی لیکن جدھر تھے کل وہاں تو بھی نہیں میں بھی نہیں دل تھا ترا ہم تھے ترے، ہر سمت تھیں

Read More

اپنی دھن میں رہنے والے ہم ایسے مستانے لوگ، ڈاکٹر حنا امبرین طارق

ڈاکٹر حنا امبرین طارق اپنی دھن میں رہنے والے ہم ایسے مستانے لوگ دنیا میں کم کم ہی ملتے ہیں ہم جیسے دیوانے لوگ چاک گریباں انکا دل و جاں پارہ پارہ سینہ ہے خونِ جگر اپنا دے کر لکھتے ہیں جو افسانے لوگ ساری راہیں ان رستوں کی ایک ہی جانب جاتی ہیں ڈھونڈتے

Read More

محبت دھوپ میں ہو، چھائوں میں ہو، ایک جیسی ہے

آئرین فرحت محبت دھوپ میں ہو، چھائوں میں ہو، ایک جیسی ہے گلے لگ کے ہو چاہے پائوں میں ہو ایک جیسی ہے کسے دکھ سکھ رہا ہے یاد پھر دن او ر راتوں کا ذرا بھی ڈرکہاں رہتا ہے ملنے والی ماتوں کا محبت میں کہاں ہے فرق اونچی نیچی ذاتوں کا نہیں کچھ

Read More

خوشہ شاعری : صبیحہ صبا اور رضیہ سبحان کی غزلیں

صبیحہ صبا جھلسی ہوئی اک درد کی ماری ہوئی دنیا اک درد کے آسیب سے ہاری ہوئی دنیا قدرت نے سجایا ہے اسے لالہ وگل سے کیا ہم نے دیا جب سے ہماری ہوئی دنیا اک کھیل تماشہ نہیں یہ چیز الگ ہے تم شوق سے لے لو کہ تمہاری ہوئی دنیا ہے اتنی کشش

Read More