پولیس تشدد کا شکار ملزم اسپتال میں دم توڑ گیا، لواحقین کا پولیس اور جیل انتظامیہ پر تشدد کا الزام

پولیس تشدد کا شکار ملزم اسپتال میں دم توڑ گیا، لواحقین کا پولیس اور جیل انتظامیہ پر تشدد کا الزام

نعمان کو 17 نومبر کو شراب بیچنے کے مقدمے  گرفتار کیا گیا تھا،والد کی میڈیا سے گفتگو

شخصیات ویب نیوز
رپورٹ:ماجد علی سید
پولیس کے ہاتھوں گرفتار ملزم نعمان سول اسپتال میں دم توڑ گیا، لواحقین نے پولیس اور جیل انتظامیہ پر تشدد کا الزام عائد کیا ہے۔اسپتال میں ڈاکٹروں کی جانب سے ملزم نعمان کے جسم پر تشدد کے نشانات کی تصدیق کی گئی ہے جبکہ جیل انتظامیہ کا دعوی ہے کہ جیل میں نعمان پر کوئی تشدد نہیں کیا گیا، یہ نشانات پہلے سے موجود تھے۔پولیس کے مطابق ملزم نعمان کو 17 نومبر کو شراب بیچنے اور پینے کے مقدمے میں گھر کے قریب سے گرفتار کیا گیا تھا۔ملزم نعمان کے والد نے میڈیا سے گفتگو میں الزام عائد کیا کہ پولیس اور جیل انتظامیہ کے تشدد سے ان کے بیٹے کی ہلاکت ہوئی ہے، پولیس نے گرفتاری کے بعد رشوت بھی طلب کی تھی رشوت نہ دینے پر بیٹے کے خلاف مقدمہ درج کر کے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔دوسری جانب پولیس نے موقف اختیار کیا ہے کہ نعمان شراب پینے اور بیچنے میں ملوث تھا ، ملزم کا کریمنل ریکارڈ موجود ہے اور ملزم کو عدالت میں پیش کرنے کے بعد جیل بھیج دیا گیا تھا۔واقعے سے متعلق ایس ایس پی سینٹرل نے بتایا کہ پہلے نعمان کو عدالت میں پیش کیا تو ضمانت پر رہا ہوگیا تھا ، پولیس کی جانب سے تشدد کے شواہد موجود نہیں ہیں ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.